New Page 1

The Efforts of www.nafseislam.com

Share This Page   

Categories @ Fatwa System

Welcome " Guest "


Category:     "  Issues Of Divorce  "
Q.No. Question Answer
4238 محترم مفتي صاحبان ميرا سوال يه هيكه ميرے دوست كي أبني بيوي سے ناراضگی ہوگئ. بيوي نے کھانا پینا چوڑ دیا .دوست کی ماں نے كها بیٹا جاؤ اپني بيؤي كو راضي كر لو كه وه كهانا كهالے اور تماری اور اسکی ناراضگی ختم ہوجاے ..بيٹا گیا بيوي كو منانے اور سمجانےاس وقت دونو اكيلے تے . بيٹا یعنئ شوهر مناتے ہوئے قران مجيد هات مے ليا اور بولا ........كيا تم چاہتی ھو کہ مے تم كو طلاق دے دو......تمارا ابو بهي بول رها تها كه اس كو طلاق دے دو...... كيا تم چاہتی ھو کہ مے تم كو طلاق دے دو...... بيوي بولي مینے کب بولا طلاق كا ..طلاق كي بات مت كرو يه كوئ مزاک نہی... ...شوهر نے راضي كرنے کی نیعت سے کھا براہی مہرابانی بتاے طلاق هوا يا نهي Answer
4267 Assalam o alaikum.mufti sahab mra sawal ye hai k agr koi shohar apni biwi pe mashroot talaq lagata ha kehta h agr tm ne kbhi falan kam kia to tmhe mri traf se talaq ho ge ab agr biwi wo kam kr le tp talaq ho jaye ge or ruju bh kr len lkn mra sawal ye ha k ab dobara wo kam.krne pr dobara talaq to nai pare ge na qk shohar ne shart ma jb bh....jb jb...or jitni bar....ya aisa koi umom ka alfaz istemal ni kia tha us ne bus ye kaha tha k agr kbh ye kam kro ge to tmhara mra rishta khtam ho jaye ge or tmhe talaq ho ge... Answer
4335 عنوان: کیا بیوی کولفظ \"تلاک\" کہنے یا لکھ کر دینے سے طلاق واقع ہو جاتی ہے جبکہ خاوند کا ارادہ یا نیت طلاق دینے کی قطعًا نہ ہو بلکہ طلاق سے ملتے جلتے لفظ \"تلاک\" سے بیوی کو خوف زدہ کرکے اس کو راہ راست پر لانا ہو۔ تفصیل: ایک خاوند ماضی میں اپنی بیوی کو چند سالوں کے وقفے سے دو بار طلاق دے چکا ہے۔اب مندرجہ ذیل واقع پیش آتا ہے بیوی نے کسی ناراضگی کے باعث خاوند کے آنے پربار بار گھنٹی دینے کے باوجود گھر کا دروازہ نہ کھولا۔ خاوند نے بیوی کو صرف ڈرانے کی خاطر باہر سے ایک چٹ لکھ کر بچوں کے ہاتھ ونڈو کے بیچ سے بیوی تک پہنچائی۔ چٹ پر اس نے لکھا if you donot open the door within 10 minutes then talak for you چونکہ خاوندکا مقصد، نیت اور ارادہ طلاق دینا ہر گز نہ تھا بلکہ طلاق جیسے ملتے جلتے لفظ \"تلاک\" سے اپنی بیوی کو محض خوف زدہ کر کے گھر کا دروازہ کھلوانا تھا لہذا اس نے ممکنہ کسی بھی غلط فہمی سے بچنے کے لیے چٹ بھیجنے سے پہلے اپنی بیوی کوکوڈ ورڈ میں دو بار یہ میسج بھی کر دیا It is tlak and NOT TALLAQ. This is just ILLUSION. (یہ تلاک ہے ، نہ کہ طلاق اور یہ صرف آنکھوں کا دھوکا ہے) سوال یہ ہے کہ اگر خاوند کے دل و دماغ میں طلاق دینے کا بالکل بھی ا ارادہ نہ ہو لیکن وہ اپنی بیوی کوصرف ڈرانے کی خاطر بیوی کو مندرجہ بالا تحریر لکھ کر دے (جس میں وہ بیوی کو خوف زدہ کرنے کے لیے طلاق سے ملتا جلتا لفظ \"تلاک\" استعمال کرے ، اور استعمال کرنے سے پہلے بیوی کے موبائل نمبر پر احتیاط کے طور پر اسے کوڈ ورڈ میں بتا بھی دے کہ یہ طلاق نہیں بلکہ تلاک ہے) تو کیا ایسا کرنے سے( یعنی طلاق سے ملتے جلتے لفظ تلاک کو بیوی کو ڈرانے کی خاطر استعمال کرنے سے) طلاق واقع ہو گئی ہے یا ان کے درمیان رشتہ ازدواج اب بھی موجود ہے؟ Answer
4343 3 months ago i married through a court mirrage .last evening at once my husband divorced me twice on phone and once through text message ......i was on my periods when all this happend ...i want to ask whether i m divorced or is there any way to prolong the relation ..cuz both me and my husband dont want divorce .. Answer
Fatawa-e-Ahlesunnat - www.nafseislam.com

 
Literature   Quran & Tafseer   Ahadees   Fatawa Jaat   Sunni Jarayed

Arabic Books

Urdu Books

English Books

Namoos-e-Risalat

Khatm-e-Nabowat

Tahreek-e-Pakistan

Kufriya Akayed-e-Batila

 

Kanz-ul-Eeman

Tafseer Ibn-e-Kasir

Durr-e-Mansoor

Tibiyan-ul-Quran

Tafseer-e-Mazhari

Tafseer-e-Naeemi

& More

 

Jamayat-ul-Ahadees

Sihaah Sittah

Sharha Saheeh Muslim

Tahavi Shareef

& More

 

Fatawa-e-Razawiya

Waqar-u-Fatawa

Fatawa-e-Amjadiya

Fatawa-e-Africa

Fatawa-e-Europe

& More

 

Kalma-e-Haq

Daeel-e-Raah

Monthy Al Ashraf

Faiz-e-Aalam

Ma'arif-e-Raza

Monthly Mustafai

Noor-ul-Habeeb

& More

Open